logo

ای پیپر

اوپینین پول

کیا اترپردیش اسمبلی انتخابات کے نتائج نے مسلم ووٹ کو بے وقعت ثابت کردیا ؟

ہاں
نہیں

ڈھاکہ۔ شمالی بنگلہ دیش میں ایک صوفی عالم دین اور ان کے گھر میں رہنے والی ایک نوکرانی کو چند نامعلوم بندوق برداروں نے گولی مار کر ہلاک کردیا۔ پولیس نے بتایا کہ فرہاد حسین چودھری (55) اور ان کی نابالغ نوکرانی کو راجدھانی ڈھاکہ سے 350 کلومیٹر دور شمالی دیناج پور ضلع میں واقع ان کی رہائش گاہ پر کل گولی مار دی گئی۔ سنی مسلم اکثریت والے ملک میں روشن خیال کارکنوں، اقلیتی فرقہ اور دیگر مذہبی گروپوں پر حملے بڑھ گئے ہیں۔مقامی پولیس سربراہ آرزو محمد نے رائٹر سے کہا ’قاتل کی شناخت نہیں ہوپائی ہے‘۔ حالانکہ انہوں نے اس واقعہ میں دہشت گردوں سے کوئی تعلق ہونے سے انکار کیا ہے۔ اس حملے کی ابھی تک کسی نے ذمہ داری نہیں لی ہے۔

اس پوسٹ کے لئے کوئی تبصرہ نہیں ہے.
تبصرہ کیجئے
نام:
ای میل:
تبصرہ:
بتایا گیا کوڈ داخل کرے:


Can't read the image? click here to refresh