logo

ای پیپر

اوپینین پول

کیا اترپردیش اسمبلی انتخابات کے نتائج نے مسلم ووٹ کو بے وقعت ثابت کردیا ؟

ہاں
نہیں

سری نگر، 11جنوری (یو ا ین آئی) پارلیمنٹ پر حملہ کے مبینہ مجرم محمد افضل گورو جنہیں 9 فروری 2013 کو دلی کی تہاڑ جیل میں پھانسی دی گئی تھی، کے بیٹے غالب افضل گرو نے جموں وکشمیر بورڈ آف اسکول ایجویشن (بوس) کے زیر اہتمام منعقدہ بارہویں جماعت کے امتحانات میں نمایاں نمبرات کے ساتھ کامیابی حاصل کی ہے۔انہوں نے سال 2016 میں بھی میٹرک کے امتحانات میں 500 میں سے 474 نمبرات حاصل کرکے 19 ویں پوزیشن حاصل کی تھی۔وادی کشمیر میں بارہویں جماعت کے امتحانات کے نتائج کا اعلان جمعرات کی صبح کیا گیاجس میں کامیاب امیدواروں کا تناسب 61 اعشاریہ 44 رہا ہے۔بارہویں جماعت کے امتحانات کے نتائج سامنے آنے کے بعد جب یہ خبر پھیل گئی کہ افضل گرو کے بیٹے غالب گرو نے 500 میں سے441 نمبرات حاصل کئے ہیں تو اہلیان وادی نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹس خاص طور پر فیس بک پر زبردست خوشی اور مسرت کا اظہار کیا اور ان کی طویل و کامیاب زندگی کے لئے دعائیں کیں۔ سائنس کا طالب علم غالب گورو ڈاکٹر بننا چاہتا ہے۔ وہ ڈسٹنکشن سے پاس ہوا ہے۔رپورٹوں کے مطابق غالب گرو کی امتحان میں نمایاں کارکردگی پر اُن کے آبائی علاقہ سوپور کے جاگیر میں جشن کا ماحول ہے۔ گذشتہ روز یعنی 9 جنوری 2018 ء کو جب وادی میں میٹرک (دسویں) کے امتحانات کے نتائج کا اعلان کیا گیا تو اس میں 2016 ء کی ایجی ٹیشن کے دوران سیکورٹی فورسز کے ہاتھوں پیلٹ گن کے استعمال سے نابینا ہونے والی انشاء مشتاق نے کامیابی حاصل کی۔انشاء کو اس وقت پیلٹ بندوق سے مکمل طور پر نابینا کیا گیا تھا جب وہ اپنے مکان کی کھڑی سے احتجاجی مظاہروں کو دیکھ رہی تھی۔ دسمبر 2011 ء میں پارلیمنٹ پر حملے کی سازش کے مبینہ مجرم محمد افضل گرو کو 9 فروری 2013 ء کو دلی کی تہاڑ جیل میں پھانسی دی گئی اور وہیں پر دفن کیا گیا ۔

اس پوسٹ کے لئے کوئی تبصرہ نہیں ہے.
تبصرہ کیجئے
نام:
ای میل:
تبصرہ:
بتایا گیا کوڈ داخل کرے:


Can't read the image? click here to refresh