logo

ای پیپر

اوپینین پول

کیا اترپردیش اسمبلی انتخابات کے نتائج نے مسلم ووٹ کو بے وقعت ثابت کردیا ؟

ہاں
نہیں

نئی دہلی،5 دسمبر ( یو این آئی) ہندستان نے سری لنکا کو تیسرے اور آخری کرکٹ ٹیسٹ کے چوتھے روز منگل کو دوسری باری میں لنچ تک دو وکٹ کھوکر 51 رن بنالئے۔ کھانے کے وقفے تک اوپنر شکھر دھون نے 38 گیندوں میں 15 رن اور چیتیشور پجارا نے 15 گیندوں پر 17 رن بنا کر کریز پر موجود تھے۔ ہندستان نے لنچ سے قبل اوپنر مرلی وجے (09) اور اجنکیا رہانے (10) کے وکٹ کھو دیئے تھے۔جب سری لنکا کی ٹیم فیلڈنگ کرنے میدان پر آئی تو زیادہ تر کھلاڑیوں نے چہرے پر ماسک پہن رکھے تھے۔وجےنے پہلی اننگز میں 155 رن بنائے تھے لیکن دوسری باری میں وہ تیسرے اوور کی پہلی گیند پر سرنگا لکمل کا شکار بن گئے۔ وکٹ کیپر نروشن ڈکویلا نے ان کا کیچ پکڑا۔ وجے سے دو چوکوں کی مدد سے نو رن بنائے۔ اجنکیا رہانے کو چیتیشور پجارا کی جگہ تیسرے نمبر پر بلے بازی کرنے کے لئے بھیجا گیا۔ ٹیم کے نائب کپتان رہانے پہلی اننگز میں ایک رن پر آؤٹ ہوگئے تھے اور دوسری باری میں انہیں ایک اچھا موقع ملا لیکن وہ اس کا فائدہ نہیں اٹھا پائے۔رہانے نے آف اسپنر دلرووان پریرا کی گیند پر ایک غیرضروری لمبا شاٹ کھیلا اور لانگ آن پر لکشن سندکن کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوگئے۔ انہوں نے 37 گیندوں میں دو چوکے لگاکر 10 رن بنائے۔ برتھ ڈے بوائے شکھر اور پجارا نے پھر لنچ تک ٹیم کا کوئی نقصان نہیں ہونے دیا ۔ ہندستان کا پہلا وکٹ 10 اور دوسرا وکٹ 29 رن کے اسکور پر گرا تھا۔قبل ازیں صبح سری لنکا نے نو وکٹ پر 356 رن سے آگے کھیلنا شروع کیا اور اس کی پہلی باری 377 رن پر ختم ہوگئی۔ ہندستان کو اس طرح پہلی باری میں 163 رن کی سبقت حاصل ہوگئی۔ سری لنکا کے کپتان دنیش چانڈی مل نے 147 رن سے آگے کھیلتے ہوئے 164 رن بنائے۔ تیز گیند باز ایشانت شرما نے چانڈی مل کو شکھر کے ہاتھوں کیچ آؤٹ کراکر سری لنکا کی اننگز135.3 اووروں میں سمیٹ دی۔چانڈی مل 472 منٹ تک کریز پر رہے ۔ انہوں نے 361 گیندوں کا سامنا کیا اور 21 چوکے اور ایک چھکا لگایا۔ سندکن صفر پر ناٹ آؤٹ پویلین لوٹے۔ ہندستان کی جانب سے ایشانت شرما نے 29.3 اووروں میں 98 رن پر تین وکٹ ، روی چندرن اشون نے 35 اووروں میں 90 رن پر تین وکٹ۔ محمد شمی نے 26 اووروں م یں 85 رن پر دو وکٹ اور رویندر جڈیجہ نے 45 اووروں میں 86 رن پر دو وکٹ لئے۔

اس پوسٹ کے لئے کوئی تبصرہ نہیں ہے.
تبصرہ کیجئے
نام:
ای میل:
تبصرہ:
بتایا گیا کوڈ داخل کرے:


Can't read the image? click here to refresh