logo

ای پیپر

اوپینین پول

کیا اترپردیش اسمبلی انتخابات کے نتائج نے مسلم ووٹ کو بے وقعت ثابت کردیا ؟

ہاں
نہیں

ممبئی، 25 دسمبر (یو این آئی) عبوری کپتان روہت شرما نے سری لنکا کے خلاف ٹوئنٹی 20 سیریز میں 0-3کی کلین سویپ کیلئے پوری ٹیم کو کریڈٹ دیا ہے لیکن اس کے ساتھ ہی ان کا خیال ہے کہ جنوبی افریقہ میں اب ہندستانی ٹیم کو بالکل مختلف طرح کے چیلنجز کا سامنا کرنا ہوگا۔ہندستانی ٹیم 2018 کے پہلے ہفتے میں جنوبی افریقہ کے دورے کے لیے روانہ ہوگی جہاں کپتان وراٹ کوہلی کی قیادت میں ٹیم سیریز کے لئے اترے گی۔ شادی کی وجہ سے و راٹ کی غیر موجودگی میں روہت نے یک روزہ اور ٹوئنٹی 20 میچوں کی کپتانی سنبھالی تھی اور1-2 اور بالترتیب0-3سے ٹیم کو سبقت دلائی ہے۔ سری لنکا کا دورہ اتوار کو ہوئے آخری ٹوئنٹی 20 کے ساتھ ہی اختتام پذیر ہو گیا جس میں اسے پانچ وکٹ سے شکست ملی تھی۔ اس سے قبل وراٹ کی قیادت میں ٹیسٹ سیریز میں اسے1-0سے ہار جھیلنی پڑی تھی۔ اس سیریز میں مہمان ٹیم واحد ون ڈے ہی جیت پائی تھی۔جنوبی افریقہ کے کچھ ہی دنوں بعد شروع ہونے والی سیریز کو لے کر سلامی بلے باز نے کہا ’’میں افریقی دورے کو لے کر بہت حوصلہ افزاء ہوں۔ یہ بالکل ہی مختلف طرح کی ہونے والی ہے اس میں کوئی شک نہیں ہے۔ لیکن میں پھر بھی دہراؤں گا کہ ہمارا گھریلو سیزن بھی آسان نہیں رہا کیونکہ کسی بھی ٹیم کو ہرانا آسان نہیں ہوتا ہے۔ ہمیں کئی مرتبہ چیلنج دیئے گئے اور ہم نے واپسی بھی کی ۔ ہم وہاں بھی ایسا ہی کریں گے‘‘۔روہت نے اپنی کامیاب کپتانی کے بعد راحت کی سانس لی اورمیچ کے بعد سبھی کھلاڑیوں کواس فتح کا کریڈٹ دیا۔ انہوں نے کہا ’’میں بہت خوش ہوں جیسے ہم نے یک روزہ اور پھر ٹوئنٹی ٹوئنٹی سیریز کی کھیلا، مجھے لگتا ہے کہ بغیر ٹیم کی کوشش کے یہ ممکن ہی نہیں تھا‘‘۔ ہمار ی ٹیمکے ہر کھلاڑی میں کام کے تیئں بہت احترام ہے سبھی نے اپنا ہوم ورک بھی بہتر کیا تھا۔ قائم مقام کپتان نے کہا ’’کھلاڑیوں نے جیسی کارکردگی دکھائی اس سے صاف ظاہر ہے کہ وہ ہر موقع کے لئے تیار رہتے ہیں کئی کھلاڑی تو ٹیم میں پہلی یا دوسری مرتبہ ہی کھیل رہے ہیں لیکن انکے کھیل کو دیکھ کر ایسا نہیں لگتا ہے کہ یہ ہمارا اور ٹیم انتظامیہ کا کام ہے کہ ان کھلاڑیوں کی پوری حمایت کرے‘‘۔انہوں نے میچ کے لئے کہا ’’ہم اس میچ میں سات بلے بازوں کے ساتھ اترے تھے ساتھ ہی واشنگٹن سندر بھی اچھے بلے باز ہیں تو ہم نے اسی ترتیب کے ساتھ جانے کا فیصلہ کیا۔ ہم نے دورے کے آغاز میں ہی اس کی بات کی تھی کہ ہم چھ بلے بازوں اور ایک آل راؤنڈر کے ساتھ اتریں گے‘‘۔

اس پوسٹ کے لئے کوئی تبصرہ نہیں ہے.
تبصرہ کیجئے
نام:
ای میل:
تبصرہ:
بتایا گیا کوڈ داخل کرے:


Can't read the image? click here to refresh