logo

ای پیپر

اوپینین پول

کیا اترپردیش اسمبلی انتخابات کے نتائج نے مسلم ووٹ کو بے وقعت ثابت کردیا ؟

ہاں
نہیں

لندن یکم جنوری (رائٹر) ایران کے کئی شہروں میں حکومت مخالف مظاہرے کے دوران ہوئے تشدد کے درمیان صدر حسن روحانی نے لوگوں سے امن و امان برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے۔آج اس کی اطلاع مہر نیوز ایجنسی نےدی۔ایران میں ضروری اشیاء کی بڑھی ہوئی قیمتوں اور مبینہ بدعنوانی کے خلاف گزشتہ چار دنوں سے ہو رہے حکومت مخالف مظاہرے پر پہلی بار عوامی طور پر اپنی رائے کا اظہار کرتے ہوئے مسٹر روحانی نے اپنی کابینہ سے کہا کہ ایرانی عوام کو حکومت پر تنقید اور اس کے خلاف مظاہرہ کرنے کا پورا حق ہے لیکن یہ پرامن ہونا چاہئے۔صدر حسن روحانی نے اپنے بیان میں کہا کہ ایران کے عوام اپنے ملک اور آس پاس کے علاقہ کے حساس پوزیشن کو سمجھتے ہیں لہذا امید ہے کہ وہ قومی مفاد کو ذہن میں رکھ ہی کوئی قدم اٹھائیں گے۔مسٹر روحانی نے امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی جانب سے ایران میں ہو رہے احتجاج کی حمایت میں تبصرہ کرنے پر کہا کہ جو ایرانی لوگوں کو دہشت گرد بتاتے ہیں، انہیں ہمارے ملک سے ہمدردی رکھنے کا کوئی حق نہیں ہے۔غور طلب ہے کہ 2009 میں متنازعہ انتخابات کے خلاف میں مظاہروں کے بعد یہ پہلی بار ہے جب لوگوں نے اتنی بڑی تعداد میں سڑکوں پر اترکر اپنے غصہ کا اظہار کیا ہے۔

اس پوسٹ کے لئے کوئی تبصرہ نہیں ہے.
تبصرہ کیجئے
نام:
ای میل:
تبصرہ:
بتایا گیا کوڈ داخل کرے:


Can't read the image? click here to refresh